25 Nov 2018

PTA block Smuggled Phones From Next Year - Latest News About Mobile Verification

By Haider Jamal Abbasi
اسلام آباد: پاکستان کے ٹیلی مواصلات اتھارٹی (پی ٹی اے) کے ذریعہ موبائل آلات کے غیر قانونی درآمد کو روکنے کی کوشش میں، موبائل پیغامات کے ذریعہ مختصر پیغام رسانی سروس (ایس ایم ایس) کے ذریعہ پیغامات کو ڈیوائس بھیجنے، رجسٹریشن اور بلاک کرنے کا نظام (ڈی آئی بی بی بی) .

کسی بھی موبائل ڈیوائس کو پی ٹی آئی / ڈی آئی بی بی کے قواعد کے مطابق بلاک کرنے کے بعد غیر مطابقت پذیر حیثیت کی عکاس ہوتی ہے.


نظام جائز آلہ درآمد اور موبائل ڈیوائس کے صارفین کو سہولت فراہم کرتا ہے اور مجموعی طور پر سیکورٹی کی صورت حال کو بہتر بنا دیتا ہے.
جاری کردہ معلومات کے مطابق، ٹیلی کام صارفین نے اپنے موبائل آلہ کی حیثیت کو بین الاقوامی موبائل آلات کی شناخت (آئی ایم ای آئی) نمبر بھیجنے کے ذریعہ ایس ایم ای کے ذریعے 8484 یا ویب سائٹ پر بھیج سکتے ہیں. حیثیت www.dirbs.pta.gov.pk کی طرف سے بھی تصدیق کی جا سکتی ہے یا Google Play Store سے DIRBS لوڈ، اتارنا Android موبائل کی درخواست کو ڈاؤن لوڈ کرسکتے ہیں. ڈی آئی بی بی کے فائنل مرحلے 2018 کو شروع ہو جائیں گے.
پی ٹی اے ایک سینئر اہلکار نے کہا کہ غیر قانونی اور غیر رجسٹرڈ موبائل ہینڈ سیٹس عوامی سیکورٹی کے لئے خطرہ ہیں. سرکاری نے مزید کہا کہ دہشت گردوں اور مجرموں کو یہ پتہ نہیں جاسکتا ہے کہ یہ موبائل فون استعمال کرتے ہوئے پورے ملک میں کسی بھی خطرناک سرگرمی کے لئے استعمال کرتے ہیں.

زیادہ تر مقدمات میں، یہ دیکھا گیا ہے کہ عام ہینڈ سیٹس، عام طور پر کسی بھی شناخت کے بغیر مجرمانہ سرگرمیوں میں استعمال نہیں کیا جاتا ہے. یہ ہینڈ سیٹ یا تو دیگر ممالک، مقامی بازار، یا لوگوں سے چھٹکارا یا چوری کئے گئے ہیں.

پی ٹی اے نے ڈی آئی بی بی نامی ایک ایسی نظام کو لاگو کیا تھا جس سے صرف ایک غیر قابل اطمینان ہینڈ سیٹ بیکار بنائے گا. اس کا مطلب ہے کہ ہینڈ سیٹ مقامی نیٹ ورک پر کام نہیں کریں گے.

اب ہینڈ سیٹ یا کسی بھی سمت چلنے والی پی ٹی اے کے نظام کے ساتھ رجسٹرڈ ہونے کی ضرورت ہے. فون کے ایک آئی ایم ای آئی 15 پوائنٹس کوڈ ہے، جو پی ٹی اے کی ڈیٹا بیس میں دستیاب ہونا چاہئے یا صارف کو پی ٹی اے سسٹم کے ساتھ اپنے فون کو رجسٹر کرسکتا ہے.

پہلے کی آخری تاریخ کے بعد، پی ٹی اے تمام غیر رجسٹرڈ ہینڈ سیٹس کو پیغام بھیجے گا اور ان سے پوچھیں کہ ڈی آئی بی بی ایس کے ساتھ رجسٹریشن حاصل کرنا ہوگا. یہ ایک مرحلہ وار عمل ہے جو مکمل ہونے کے چند ماہ لگے گا. ٹیلی کام کے اتھارٹی کو مختلف شہروں میں عوام کو تعلیم دینے کے بارے میں بیداری کی مہم چلانا ہوگی.

0 comments: